کیا واقعی چکن میں کورونا موجود ہے؟ فوڈ اتھارٹی نے بتا دیا

مرغی کے گوشت میں ایڈینو اور کورونا وائرس کی موجودگی کا معاملہ، پنجاب فوڈ اتھارٹی کے سائنٹیفک پینل نے مرغی سے انسانوں میں کورونا وائرس کی منتقلی کے امکان کو رد کر دیا۔ترجمان کا کہنا ہے کہ ڈی جی فوڈ اتھارٹی کی ہدایت پر سائنٹیفکپینل نے معاملے کی تحقیق کی۔ تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ مرغی

کا گوشت انتہائی درجہ حرارت پر پکنے کے بعد وائرس کے پھیلاؤ کا سبب نہیں بن سکتا۔ پاکستان میں آج کل مرغیوں میں مختلف بیماریاں رپورٹ ہو رہی ہیں۔ رانی کھیت،برڈ فلو اور ایڈینووائرس جیسی بیماریاں مرغیوں میں رپورٹ ہو رہی ہیں۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی ریسرچ کے مطابق بیماریوں کی وجہ سے مرغیوں میں نزلہ، زکام،گردن کا مڑنا،نمونیہ اور سانس میں دشواری جیسی علامات ظاہر ہوتی ہیں۔ انسانی

جسم میں ان بیماریوں کے داخل ہونے یا مضر اثرات ظاہر ہونے کے کوئی سائنسی ثبوت نہیں۔کورونا وائرس کو رانی کھیت،برڈ فلو یا ایڈینو وائر س سے ہرگز منسلک نہیں کیا جا سکتا۔ترجمان کا مزید کہنا تھا کہ مرغی کے گوشت میں کورونا وائرس کی موجودگی کسی بھی طرح ثابت نہیں۔تحقیق کے مطابق مرغی گوشت میں کسی بھی قسم کا وائرس تیز درجہ حرارت پرپکنے سے تلف ہو جاتاہے۔

About soban

Check Also

”زندگی میں اگر خوشی چاہیے تو تین با تیں اپنے ساتھ باندھ لو او ر غم کو ہمیشہ کے لیے نکال دو۔“

اچھی کتابیں اور سچے لوگ ہر کسی کو سمجھ نہیں آتے! دنیا میں کوئی نہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *