مضبوط کرنے کے نایاب ٹوٹکے

ہمارے جسم ہر طرح کی بیماریوں سے مقابلہ کرنے کے لیے تیار رہتی ہے ۔ آپ لوگوں نے دیکھا ہوگا کہ بہت سے لوگ بدلتے موسم میں بیمار پڑتے ہیں۔ اور جب یہ لوگ بیمارہوجائیں تو ایسے افراد کوٹھیک کرنے میں بھی کافی وقت لگ جاتا ہے۔ اور کئی لو گ ایسے ہوتے ہیں۔ جو کئی سال بھی بیمار ہی نہیں ہوتے ۔ ایسے افراد بہت سی خطرناک بیماریوں کا مقابلہ کرکے بہت جلدی ٹھیک بھی ہوجاتے ہیں۔ اور لمبے عرصے تک صحتمند رکھ پاتے ہیں۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ آپ کبھی بیمار نہ ہوں۔ اور آپ کی بڑی سے بڑی بیماری جلدی سے ٹھیک ہوجائے۔ اور وائرسز سے بچے رہیں۔

تو اس کے لیے ہمار ی قوت مدافعت کا مضبو ط ہونا بہت ضروری ہے۔ یہ کیسے ممکن ہے ؟ کہ وہ کونسی علامات ہیں کہ جن سے اندازہ ہوجائے کہ ہماری قوت مدافعت کمزورہوگئی ہے۔ اور وہ کونسے طریقے ہیں۔جن کواستعمال کرکے ہم اپنی قوت مدافعت کو دس گنا زیادہ طاقت ور اور مضبوط کرسکتے ہیں۔ اب ہم بات کر لیتے ہیں۔ کچھ ایسی غذاؤں کی جن کو اپنی روزمرہ کی روٹین میں شامل کرکے اپنی قوت مدافعت کو پہلے سے کئی گنا زیادہ طاقت ور بنا سکتے ہیں۔ تلسی: تلسی کا پودا ان پودوں میں سے ایک ہے جو سب سے زیادہ ادویا ت میں استعمال کیاجاتاہے ۔تلسی میں پائے جانے والی خصوصیات کی وجہ سے اسے سائینی ٹائزر اور ماؤتھ واش کے ساتھ ساتھ ٹوتھ پیسٹ اور کئی طرح کی ہومیو اور ایلو پیتھک ادویات میں شامل کیا جاتا ہے۔

پالک: وٹامن سی ،اے،بیٹاکیروٹین اوردیگر اہم غذائی اجزاء پرمشتمل ہونے کے باعث مختلف انفیکشن سے لڑنے میں مدافعتی نظام کی مددکرتاہے۔لیکن زیادہ دیرپکانے کے بجائے کم پکائی جائے تو اسکی غذائی صلاحیت برقرار رہتی ہے۔بروکلی:وٹامن اورمنرل جیسے وٹامن سی ،ای اوراے،دیگر اینٹی آکسیڈنٹس اورفائبر کاخزانہ ہونے کی وجہ سے سپر فوڈ کے طورپرجانی جاتی ہے۔اسے اپنی خوراک کاحصہ بنائیں۔عام طورپراب سبزی مارکیٹ میں آرام سے دستیاب بھی ہے۔سٹرس فروٹ:تمام سٹرس فروٹ جیسے چکوترا ، لیموں ،مالٹا،مٹھااورسنترہ وغیرہوٹامن سی سے لبریز ہیں اورانفیکشن سے لڑنے کی بھرپورصلاحیت رکھتے ہیں۔

روزانہ کی بنیاد پرآپکی وٹامن سی کی ضرورت کوبخوبی پوراکرتے ہیں۔پپیتا:پوٹاشیم،وٹامن بی ،فولیٹ کی مناسب مقدار کے ساتھ دن بھر کی وٹامن سی کی ضرورت کوپوراکرتاہے۔نظام ہضم کی درستگی کے ساتھ دافع سوزش خصوصیات رکھتاہے۔سورج مکھی کے بیج:فاسفورس ،میگنیشیم،وٹامن بی ۶اوروٹامن ای کاخزانہ ہونے کی وجہ سے مدافعتی نظام کوریگولیٹ کرنے میں اہم ہے۔ایک دن میں صرف دوچمچ سورج مکھی کے بیجوں سے ہی آپ اپنی وٹامن کی ضروریات پوری کرسکتے ہیں۔گرین ٹی:بلیک ٹی کی بہ نسبت گرین ٹی میں طاقتور اینٹی آکسیڈنٹس پائے جاتے ہیں جوامیونٹی کوبوسٹ کرتے ہیں۔

امینو ایسڈ کابہترین ذریعہ ہونے کے باعث جراثیم سے لڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ انجیر:قوت مدافعت میں اضافہ کے ساتھ ساتھ دل کو فرحت بخشتی ہے اورپیاس کوتسکین دیتی ہے۔ جسم کوصحت بخشتی ہے۔ساری خصوصیات کے ساتھ ساتھ خون میں اضافہ کرتی ہے۔ایک طرف ہم اپنی قوت مدافعت کو مضبوط کرنے کے لیے نسخہ استعمال کررہے ہوتے ہیں۔ اور دوسری طرف وہ تما م کا م کررہے ہوتے ہیں جو ہماری قوت مدافعت کو کمزور کررہے ہوتے ہیں۔ مثال کے طور پر ہماری نیند کی سائیکل کاہماری قوت مدافعت پر سب سے زیادہ اثر ہوتا ہے کیونکہ چوبیس گھنٹوں میں ہم جتنی دیر سوتے ہیں۔ ہمار ا جسم اتنا ہی وقت ہمارے قوت مدافعت کو مضبوط کرنے کےلیے دیتی ہے۔

اس وقت ہمارا جسم سارے ٹاکسن کو نکال کر قوت مدافعت کو ٹھیک کرتی ہے۔لیکن ضرورت سے زیادہ نیند ہماری قوت مدافعت پر اثر کرتی ہے۔ ٍہمیشہ سا ت سے نو گھنٹے کی نیند ضرور لیں۔ اس جس طرح کا کھانا پینا لے رہے ہیں۔ اس میں نیوٹریشن نہ ہونے کے برابر ہوتی ہے۔ وہ اس لیے کہ ہم جو بھی کھاتے ہیں۔ ا س کا ستر فیصد حصہ پیکٹ والے کھانے یا فاسٹ فوڈز ہی ہوتے ہیں ۔ تازہ اور سادہ کھانے کے بجائے جنک فوڈز کھانا زیادہ پسند کرتے ہیں۔ اس طر ح کے کھانے ہمارے قوت مدافعت کو تباہ کردیتے ہیں۔ اپنےڈائیٹ میں زیادہ سے زیادہ کچی سبزیاں ، سلاد اور پھلوں کو شامل کریں۔

About soban

Check Also

”زندگی میں اگر خوشی چاہیے تو تین با تیں اپنے ساتھ باندھ لو او ر غم کو ہمیشہ کے لیے نکال دو۔“

اچھی کتابیں اور سچے لوگ ہر کسی کو سمجھ نہیں آتے! دنیا میں کوئی نہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *