مسوڑھوں کی سوجن ، دانت کادرد

دانتوں اور مسوڑوں کا درد ایک صحت مند انسان کو بھی مشکل میں ڈال دیتا ہے۔ ماہرین کے مطابق چند گھریلو نسخے ایسے موجود ہیں جن کی مدد سے اس درد کی شدت میں کمی لائی جا سکتی ہے مسوڑھوں میں سوجن اور درد ایک ایسا مسئلہ ہے جو کسی کو بھی پریشان کر سکتا ہے ۔ عام طور پر دانتوں کے زیادہ تر مسائل معدے کی خرابی اور بڑھی ہوئی تزابیت کے نتیجے میں رونما ہوتے ہیں ۔ اور جب دانتوں کے مسائل طول پکڑ جاتے ہیں تو پھر دانت پیٹ کے امراض کا سبب بن جاتے ہیں ۔ دانتوں کے امراض میں مبتلا افراد کو پہلے اپنے معدے کی درستگی پر توجہ دینی چاہیے ۔ کولا مشروبات ، بیکری مصنوعات ، بادی اور مرغن غذاؤں سے پرہیز کرنا چاہیے ۔

دانتوں اور مسوڑھوں کے مسائل کی ایک بڑی وجہ نکوٹین اور کیفین کا غیرضروری استعمال ہے۔ لہذا ان افراد کو چاہیے کہ چائے ، چاکلیٹ اور چاکلیٹ سے بنی مصنوعات سگریٹ نوشی اور کیفین اور نکوٹین پر مشتمل دیگر غذاؤں کو فوری طور پر ترک کر دیں ۔ بطور علاج گیرو اور بھاٹا ہموزن پیس کر پاؤڈر بنالیں اور وقفے وقفے سے دانتوں اور مسوڑھوں پر لگا کر چھوڑ دیں اور منہ سے پانی بہنے دیں ۔ دو دن کے استعمال سے ہی دانتوں سے خون آنا بند اور مسوڑھوں کی سوزش ختم ہو جائے گی ۔ کیکر کی نرم مسواک کا متواتر استعمال بھی مسوڑھوں کی سوجن سے بچاؤ میں مددگار ثابت ہو سکتا ہے ۔

مسوڑھوں میں جلن، درد،سوجن یا خون نکلنے کی شکایت وٹامن کی کمی، ہارمونز میں تبدیلی، ذیابیطس اور سکروی امراض کے باعث پیدا ہوتی ہے۔ایک کپ گرم پانی میں ایک چمچ نمک حل کریں ایک گھونٹ کی مقدار کے برابر پانی تیس سیکنڈ تک منہ میں رکھیں اسکے بعد قلی کر لیں اس عمل کو دن میں کم سے کم دو بار دوہرانے سے آپ مسوڑوں کی سوزش اور دیگر انفکیشنز سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔ٹی بیگ میں موجود ٹینک ایسڈ فوری آرام کے لئے نہایت سود مند ہے استعمال شدہ ٹی بیگ کو ٹھنڈا کر کے مسوڑوں کے متاثرہ حصے پر پانچ منٹ تک رکھا رہنے دیں درد ختم ہو جائے گا۔شہد میں قدرتی طور پر اینٹی بیکٹریل صلاحیت موجود ہوتی ہے برش کرنے کے بعد شہد کو متاثرہ حصے پر لگا کر ہلکی سی مالش کرنے سے انفیکشن ختم ہو جاتا ہے۔

اگر آپکو مسوڑوں میں درد سوزش یا انفیکشن کی شکایت ہے تو ایسی غذاؤں کا استعمال بڑھا دیں جن میں وٹامن سی اور وٹامن ڈی کی کثیر مقدار موجود ہو۔لیموں کے رس میں نمک ملا کے پیسٹ بنا لیں دانتوں اور مسوڑوں پر لگا کے پانچ منٹ تک چھوڑ دیں غراروں کے ذریعے منہ صاف کر لیں اس طرح کرنے سے مسوڑھوں کے درد سمیت دیگر مسائل میں واضح آرام محسوس ہوگا۔لونگ میں موجود اجزا دانتوں کے علاج کے لئے ایک قدرتی دو کی حثیت رکھتے ہیں دو سے تین اعداد لونگ کے دانے دانتوں کے متاثرہ حصے پر اس وقت تک رکھے رہنے دیں جب تک درد دور نہ ہو جائے جلد آرام ا جائے گا۔برف بھی دانتوں کی تکلیف میں درد کو کم کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے

برف کا ٹکڑا کسی بھی باریک سے کپڑے میں رکھ کے اپنے گالوں پر رکھ کے ٹکور کریں درد جلد ہی ختم ہو جائے گا۔ دانت کے درد کی صورت میں کالی مرچ اور نمک کو ہم مقدار لے کر پیس کے منہ میں رکھ لیں جلد آرام آ جائے گا۔ایک لہسن کا جوا اپنے منہ میں رکھیں یا پھر لہسن کو پیس کے اس پہ نمک لگا کے بھی منہ میں رکھا جا سکتا ہے۔ دونوں صورتوں میں تکلیف سے نجات ملتی ہے۔روئی کو گرم پانی میں بھگوئیں اسکے بعد اسے بیکنگ سوڈے میں رکھ دیں جب روئی اچھی طرح بیکنگ سودے کو جذب کر لے اسے درد والے حصے پر لگائیں اگر آپ چاہئیں تو ایک گلاس پانی میں دو چمچے بیکنگ سوڈا ڈال کر اچھی طرح حل کر لیں اس پانی سے کلی کریں دونو عمل درد کو کم کرنے کے لئے اچھا اقدام ثابت ہونگے۔ایک کھیرے کو چھوٹے چھوٹے ٹکڑوں میں کاٹ لیں اور اسے دُکھنے والی داڑھ یا دانت کی جگہ پہ رکھیں۔

About soban

Check Also

ہیرا کو پہننے کے بے شمار فائدے۔

ستاروں کے نیک اثرات میں اضافے اور بد اثرات کو دور کرنے کیلئے ستاروں کی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *