”بغلوں سے آنے والی بدبو کا فوری خاتمہ“

اگر آپ اپنی بغلوں اور پسینے کی بدبو سے تنگ ہیں تو ذیل میں بتائے گئے طریقے آزما کر اس ناگواربدبو سے نجات پاسکتے ہیں۔ایک بوتل میں پانی ڈال کر اس میں سیب کا سرکہ اورلیموں کا رس شامل کریںاور ہرورز صبح سویرے اس محلول کابغلوں میں سپرے کرنے سے بدبو نہیں آئے گی۔آپ چاہیں تو دن میں دو یا تین بار یہ محلول استعمال کرسکتے ہیں۔چونکہ پسینے میں تیزابیت ہوتی ہے لہذا لیموں میں موجودپی ایچ اس کے لئے بہت اچھی ہے۔لیموں کاٹ کر اسے اپنی بغلوں میں 15منٹ تک رکھیں اور بدبوسے نجات پائیں۔پانی یا عرق گلاب میں ہائیٹروجن پر آکسائیڈ ڈال کر اس محلول کو بغلوں میں لگانے سے بدبو ختم ہوجاتی ہے۔یہ نہ صرف کھانوں میں استعمال کیا جاسکتا ہے لیکن اگر اسے بغلوں کی بدبو کے لئے استعمال کی جائے تو بھی یہ بہت مفید ہے۔بیکنگ سوڈا اور کارن سٹارچ کو مکس کریں اور اسے بغلوں میں لگالیں،سارا دن آپ کو بہت کم پسینہ آئے گا۔

بظاہر یہ عجیب لگتا ہے لیکن اگر آپ شیو کرنا کم کردیں گے تو بغلوں کے بالوں کی وجہ سے پسینہ ان میں جذب ہوجائے گا ۔بار بار شیو کرنے سے جلد نازک ہوجاتی ہے اور مسائل پیدا ہونے لگتے ہیں۔یہ تیل جلد کے لئے بہت زیادہ مفید ہے اور اس کے استعمال سے نہ صرف جلد کی بیماریاں اور انفیکشن دور ہوتی ہے بلکہ یہ جسم کی بدبو کے لئے بھی مفید ہے۔چند قطرے ٹی ٹری آئل کوعرق گلاب میں شامل کریں اور اس محلول کاسپرے کریں۔جسم اور بغل کی بدبو ختم یا کم ہوجائے گی۔کوشش کریں کہ قدرتی آئل سے بنے صابن کااستعمال کریں۔نہاتے ہوئے ایسے صابن سے نہ صرف آپ کی جلد نرم وملائم رہے گی بلکہ بو بھی نہیں آئے گی۔یہ قدرتی منرل بغلوں کی بو کے لئے بہت اچھا ہے۔نہانے کے بعد اسے بغلوں میں لگانے سے پسینہ بھی کم آئے گا اور بدبو بھی نہیں آئے گی۔ایلم کا گیلاٹکڑا لے کر بغلوں میں ملنے سے بدبو ختم ہوجائے گی۔یوں تو پسینے کے نظام میں بہت سی خرابیاں ہو سکتی ہیں لیکن بڑی اور عام خرابیاں تین قسم کی ہیں۔جلد سے پسینے کا معمول سے کم مقدار میں خارج ہونا۔بدبو دار پسینے کا خارج ہونا۔پسینے کا معمول سے زیادہ خارج ہونا۔کم مقدار میں پسینہ خارج ہونا دراصل خودکار اعصاب کی سست عملی کی وجہ سے پیدا ہونے والی بیماری ہے۔

یہ صورت پیدائش کے وقت بھی ہو سکتی ہے۔ بعض بیماریوں کی وجہ سے بھی پسینے کی کمی کی علامت ظاہر ہوتی ہے۔ اگر بیماری کی صحیح وجہ کا پتہ چل جائے تو بعض اوقات پسینے کی کمی کو درست کیا جا سکتا ہے لیکن عام طور پر ایسا مشکل ہی ہوتا ہے۔ البتہ تکلیف سے فوری نجات کے لیے زیادہ سے زیادہ اتنا کیا جا سکتا ہے کہ متاثرہ شخص کو بڑی احتیاط کے ساتھ موسم سے ہم آہنگ کیا جائے۔جلد کی خشکی اور سختی کو درست کرنے کے لیے ناریل کا تیل اور بعض دوسری چکنی اشیا کو استعمال کیا جا سکتا ہے۔ پسینے میں بدبو عام طور پر پسینہ خشک ہونے کی وجہ سے پیدا ہوتی ہے۔ نیز پسینے کے غدود سے پسینے کے اخراج اور جلد کی سطح پر اس کے بخارات میں تبدیل ہونے کے بعد اس میں ہونے والی کیمیائی تبدیلی سے بھی اس میں بدبو پیدا ہو جاتی ہے۔عام طور پر جسم کے اس حصے کے پسینے میں بدبو زیادہ پیدا ہوتی ہے جہاں پسینہ خارج تو خاصا ہوتا ہے لیکن یہ خشک اتنی تیزی سے نہیں ہو پاتا، جیسے بغلوں میں یا مکمل طور پر بند جوتا پہننے والوں کے پاؤں کے تلووں پر۔ بعض غذائیں، ادویات اور جراثیم بھی پسینے میں مخصوص قسم کی بو پیدا کرتے ہیں اور ان میں سے بعض اقسام کی بو بہت بری ہوتی ہے۔

About soban

Check Also

”زندگی میں اگر خوشی چاہیے تو تین با تیں اپنے ساتھ باندھ لو او ر غم کو ہمیشہ کے لیے نکال دو۔“

اچھی کتابیں اور سچے لوگ ہر کسی کو سمجھ نہیں آتے! دنیا میں کوئی نہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *