اب گرمی سے پریشان ہونا نہیں بہت ہی آسان صحتمند مشروب گھر پر بنائیں جس کا ایک ایک گھونٹ روح کو تسکین دے

گرمی کے موسم میں جب سورج سر پر چمکتا ہے ۔ تو جانور ، چرند ، پرند اور انسان بے چین ہوکر سائے کی تلاش اور ٹھنڈی ہوا کی جستجو میں ہوتے ہیں۔ پرندے پیاس کے مارے درختوں کی شاخوں میں منہ کھولے بیٹھے ہوتے ہیں۔ اور بازار سنسان ہوجاتے ہیں۔ موسم گرم کی پہلی طلب فرحت بخش مشروبات ہوتے ہیں تاکہ گرمی کے احساس کو کم کیا جاسکے۔

ولائتی مشروبات ہمارے علاقائی موسمی تقاضوں کو پورا نہیں کرتے۔ اس کی نسبت ہمارے دیسی مشروبات زیادہ فرحت بخش ہوتے ہیں۔ لیموں کی اشکنجبین ، املی آلو بخارے کا شربت ، دودھ دہی کی لسی ، ستو کا شربت، بادام ،خشخاش اور جو کا شربت ان تمام مشروبات کا استعمال گرمی میں فرق کا احساس دلاتا ہے۔ یہ صحت تندرستی دیتے ہیں۔ اور توانائی بھی بحال کرتےہیں۔ ان کوتیار کرنا بہت ہی آسان ہے۔ا ور کم خرچ میں گھر انہیں حفظان صحت کے اصولوں کے مطابق تیار کیا جاسکتا ہے۔ یہ قوت مدافعت میں بھی اضافہ کرتے ہیں۔ آپ کو تین ایسے مشروبات نمبر ایک پر ہے املی آلوبخارے کا شربت: یہ شربت گرمیوں میں بہت پیا جاتا ہے۔

گلی گلی لوگ ریڑھیوں پر املی اور آلو بخارے کا شربت بیچتے نظر آتے ہیں۔ مگر اسے نہایت سہولت اور صفائی کے ساتھ گھر میں تیار کیا جاسکتا ہے۔ا س کے لیے آدھا کلو املی اور آدھا کلو آلو بخارا پانچ سے چھ گھنٹوں کے لیے پانی میں بھگو دیں۔ پھر ان کو گرینڈ کرلیں۔ یا صاف ستھرے ہاتھوں سے ملیں۔ اور چھان کر گٹھلیاں علیحدہ کرلیں۔ پھر اس مرکب کو دو کلو چینی کے ساتھ پکائیں مناسب گاڑھا ہونے پر ٹھنڈا کرکے بوتلوں میں بھر دیں۔ بوتلیں فریج میں رکھیں تو شربت زیادہ عرصے تک محفوظ رہے گا۔ دوسرے نمبر ستوکا شربت: ستو نبی کریم ﷺ کی خاص مرغوب غذا تھی۔

یہ جو سے بنتے ہیں۔ اور کالی جو سے بنے ہوئے ستو بہترین ہوتے ہیں یہ جو کے آٹے کو ہلکی آنچ پر بھو ن کر تیار کیے جاتےہیں۔ گرمی میں یہ مشروب واقع راحت جان ہوتا ہے۔ ستو کا شربت بھی املی آلوبخارے کی طرح گرمیوں میں گلی گلی ریڑھیوں اور ٹھیلوں پر بکتا ہے مگر یقین سے نہیں کہا جاسکتا۔ کہ تجارتی بنیادوں پر فروخت ہونے والے اس شربت میں صاف ابلا ہوا پانی یا دھلے ہوئے ستو شامل کیے گئے ہیں یا نہیں ؟ اس لیے اس کو گھر پر تیار کرنا بہتر ہے۔ ستو میں شکر، پانی اور برف ڈال کر نہایت لذیذ اور فرحت بخش مشروب تیارہوجاتاہے ۔ اس کے لیے روح افزاء بزوری یا الائچی وغیرہ کے شربت میں دو چمچ ستو شامل کرنےسے اسے زیادہ مفید بنایا جاسکتا ہے۔ تیسرے نمبر پر ہے لیموں کی اشکنجبین : لیموں تازگی و توانائی اور صحت دینے والا پھل ہے

یہ اینٹی بیکٹیریل ہونے کے ساتھ اس میں فاسفورس، فولاداور وٹامنز موجود ہوتے ہیں۔ لیموں کی اشکنجبین میٹھی بھی بنتی ہے۔ اور نمکین بھی۔ یہ لیموں کے رس میں پانی اور حسب ذائقہ نمک یا چینی ڈال کر بنائی جاتی ہےبعض گھروں میں چینی کا شیرہ تیارکرکے بوتلوں میں رکھ دیا جاتا ہے۔ اور جب ضرورت ہوتو سہولت سے لیموں سے نچوڑ کر اور شیرہ ڈال اشکنجبین بنا لی جاتی ہے۔ جبکہ اگر لیموں کے رس میں شہد اور پانی ڈال کر پیا جائے تو اس کی افادیت اور بھی بڑھ جاتی ہے۔ اس سے نا صرف گرمی کی شدت کم ہوتی ہے۔ بلکہ یہ دل کی صحت کےلیے بہت بہترین مشروب ہے۔ شوگر کے مریضوں کو سفید شکر سے پرہیز کرنا ہوتا ہے۔ البتہ ڈاکٹر سے پوچھ کر وہ شہد کی کچھ مقدار کا استعمال کرسکتے ہیں۔

About soban

Check Also

ہیرا کو پہننے کے بے شمار فائدے۔

ستاروں کے نیک اثرات میں اضافے اور بد اثرات کو دور کرنے کیلئے ستاروں کی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *