بینک کی ملازمت جائز ہے یا ناجائز؟فتویٰ جاری ۔۔ہر مسلمان کیلئے یہ خبرپڑھنا لازمی

سوال: بینک کی ملازمت جائز ہے یا ناجائز؟جواب: عام طور پر بینکوں کا کاروبار سود پر مبنی ہوتا ہے، اس لیے بینک کی ملازمت نہ کرنا ہی بہتر ہے.البتہ اگر کسی شخص کے گھریلو حالات بہت ہی خراب چل رہے ہوں تو وہ وقتی طور پر بینک کی ملازمت قبول کرلے اور کسی ایسی ملازمت کی تلاش میں رہے جہاں

سودی آمدنی سے بچت ہوسکے۔ بینک کی ملازمت صرف اضطراری حالت ہی میں کہ جس میں آدمی اور اس کے گھر والوں کی جان تک چلے جانے کا خطرہ ہو، جائز ہے، عام حالت میں بینک کی ملازمت جائز

About soban

Check Also

”زندگی میں اگر خوشی چاہیے تو تین با تیں اپنے ساتھ باندھ لو او ر غم کو ہمیشہ کے لیے نکال دو۔“

اچھی کتابیں اور سچے لوگ ہر کسی کو سمجھ نہیں آتے! دنیا میں کوئی نہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *