کرونا وائرس اور کئی بیماریوں سے نجات۔

ان حالات میں لوگوں کو اس وائرس سے بچانے کے لیے غیر سرکاری تنظیم واٹر ایڈ پاکستان کی جانب سے بھی احتیاطی تدابیر پر مشتمل ایک ویڈیو جاری کی گئی ہے، جس کے مطابق اس وائرس سے بچنے کے لیے- لوگوں سے نہ ہاتھ ملائیں اور نہ ہی گلے ملیں ہاتھوں کو باقاعدگی سے صابن کے ساتھ کم از کم 20 سیکنڈز تک دھویں بغیر دھلے ہاتھوں سے آنکھوں، ناک یا منہ کو نہ چھوئیں کھانستے وقت اپنے منہ کو ٹشو پییر یا کہنی سے ڈھانپ لیں استعمال شدہ ٹشو کو ہمیشہ کوڑے دان میں ڈالیں ہجوم میں جانےکی بجائے گھروں میں رہیں مزید بتایا گیا کہ ایسے حالات میں اگر آپ کھانسی، نزلہ اور سانس لینے میں دشواری کے ساتھ ساتھ بخار میں مبتلا ہوں تو 1166 پر رابطہ کریں۔

کورونا وائرس کی علامات میں کھانسی، چھینک آنا اور سانس کی کمی شامل ہے جب کہ کچھ مریضوں کو سر درد اور معدے کے مسائل کا بھی سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ڈاکٹر مائیکل کری نے کہا کہ حفظانِ صحت کی مشق کرنے علاوہ اپنے نظامِ قوت مدافعت کو مضبوط رکھنے کے لیے صحت مند غذاؤں کا استعمال کرنا بھی ضروری ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ کورونا وائرس پر قابو پانے کے لیے کوئی ویکسین تیار نہیں کی گئی ہے اور نا ہی ہمارے پاس اس وائرس پر قابو پانے کے لیے کوئی دوائیاں ہیں۔ڈاکٹر نے لوگوں کو ہدایت جاری کی ہیں کہ (این نائن فائیو) ماسک کا استعمال کریں جو عام طور پر پاکستان میں اسموگ کے موسم میں استعمال کیا جاتا ہے، اس ماسک کی مدد سے وائرس کے خطرات کو کم کیا جا سکتا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس سے ہونے والی بیماری انفلوئنزا یا فلو جیسی ہی ہے اور اس سے ابھی تک اموات کافی حد تک کم ہیں۔ماہرین کے مطابق عالمی ادارہ صحت کی سفارشات کے مطابق لوگوں کو بار بار صابن سے ہاتھ دھونے چاہئیں اور ماسک کا استعمال کرنا چاہیئے اور بیماری کی صورت میں ڈاکٹر کے مشورے سے ادویات استعمال کرنی چاہیئے۔کولمبیا کی یونیورسٹی آف برٹش کے کلینیکل ایسوسی ایٹ پروفیسر ڈاکٹر مائیکل کری نے غیر ملکی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’کورونا وائرس پر قابو پانے کا بہترین حل حفظانِ صحت کی مشق (پریکٹس گڈ ہائجین) کرنا ہے۔

ڈاکٹر مائیکل کری نے لوگوں کو ہدایت کی ہے کہ اپنے منہ کو ماسک کے ذریعے ڈھانپ کر رکھیں، اپنے ہاتھوں کو اچھی طرح باقاعدگی سے دھوئیں اور رش والی جگہوں پر جانے سے گریز کریں۔علاوہ ازیں امریکا کے سینٹر فار ڈیزیز کنٹرول اینڈ پری ونشن نے لوگوں کو یہ ہدایت کی ہے کہ اپنے ہاتھوں کو کم سے کم 20 سیکنڈز تک دھوئیں، بغیر ہاتھ دھوئے آنکھ ،ناک اور منہ کو نہ چھوئیں۔جیسا کہ ہم سب ہی جانتے ہیں کہ کرونا وائرس بہت ہی زیادہ خطرناک ہے تو ہمیں اس سےبچاؤ کر نا ہی ہو گا تا کہ ہم اس کے شکار سے بچ سکیں۔ اور ایک صحت مند زندگی گزار سکیں۔ اللہ ہم سب کو اپنے حفظ و امان میں رکھیں۔

About soban

Check Also

ہیرا کو پہننے کے بے شمار فائدے۔

ستاروں کے نیک اثرات میں اضافے اور بد اثرات کو دور کرنے کیلئے ستاروں کی …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *