جس گھر میں افطاری کے دوران گر بوز کھا یا جا تا ہے اس گھر میں پھر کیا ہو تا ہے؟

تربوز موسم گرما کا وہ خاص پھل ہے جس میں 92فیصد پانی پایا جاتا ہے اور پانی انسانی صحت کے لئے بہت اہم ہے۔ انسانی جسم کا ہر خلیہ اپنے افعال درست طریقے سے انجام دینے کے لئے پانی پر انحصار کرتا ہے، رمضان کے دوران روزے دار دن میں لمبے وقفے تک پانی کا استعمال نہیں کرتے، اس حوالے سے یہ سوال پیدا ہوتا ہے کہ افطار کے بعد جسم کے تمام اعضا کو طبعی حالات میں کام کرنے کے لئے کتنا پانی ضروری ہے۔موسم گرما کے آغاز ہی میں ہر جگہ تربوز نظر آنے لگتا ہے، تربوز کے استعمال سے صحت پر اس قدر طبی فوائد حاصل ہوتے ہیں کہ انسانی عقل دنگ رہ جائے۔

غذائی ماہرین کے مطابق گرمیوں میں زیادہ پسینہ آنے اور روزہ رکھنے کی صورت میں پانی کی کمی کا ہونا عام بات ہے اور ان مسائل کا حل تربوز کے استعمال سے کیا جا سکتا ہے۔ طبی ماہرین کے مطابق تربوز اینٹی آکسیڈنٹ کے طور پر بھی کام کرتا ہے اور قوت مدافعت بڑھانے میں معاون ہے، اس کی ٹھنڈی تاثیر اور اس میں موجود وٹامن بی جسم میں تھکاوٹ کا احساس ختم اور انسان کو تروتازہ کرتا ہے، تربوز میں موجود امائنو ایسڈز بلڈ پریشر کو قابو رکھنے میں مدد فراہم کرتے ہیں۔غذائی ماہرین کے مطابق تربوز غذائیت سے بھرپور پھل ہے جس کے 100 گرام میں 30 کیلوریز، صفر فیصد فیٹ، 112 ملی گرام پوٹاشیم ، 8 گرام کاربوہائیڈریٹس، 6 گرام شوگر، 11 فیصد وٹامن اے، 13 فیصد وٹامن سی پایا جاتا ہے جو کہ انسانی صحت کے لئے لازمی جز ہے۔

اگر بات کی جائے رمضان کی تو تربوز کے جوس کے بھی صحت پر متعدد فوائد مرتب ہوتے ہیں، تربوز کا جوس افطار کے دوران یا ورزش کے بعد فوراً توانائی بحال کرنے میں مدد فراہم کرتا ہے۔ دل کی صحت کے لئے بھی تربوز بہترین پھل ہے، تربوز انسان کو عارضہ قلب کی بیماریوں سے محفوظ رکھتا ہے اور بلڈ پریشر سمیت کولیسٹرول کو کم کرنے میں بھی مدد فراہم کرتا ہے اکستان کی زمین موسمی پھلوں کی پیداوار کے لحاظ سے قدرتی طور پر مالا مال ہے۔ سردیوں میں جہاں سرگودھا اور ہری پور کا علاقہ مالٹا پیدا کرتا ہے وہیں گرمیوں میں سندھ اور جنوبی پنجاب سے کئی اقسام کا آم تیار ہو کر مارکیٹ میں آ جاتا ہے۔ چمن سے انگور مارکیٹ کی رونق بنتے ہیں۔

ان کے علاوہ ملک کے کئی علاقوں سے سیب اور کیلا بھی کم و بیش پورا سال دستیاب رہتے ہیں ہ تمام پھل اگرچہ اپنے ذائقے، غذائیت اور فوائد کے حوالے سے قدرت کا بہترین تحفہ ہیں لیکن گزرتے وقت کے ساتھ ان کی قیمتیں اتنی بڑھ گئی ہیں کہ عام آدمی انھیں خریدنے سے قاصر ہے۔ ایسے میں تربوز ایک ایسا پھل ہے کہ جو آتا تو صرف شدید گرمی کے موسم میں ہے لیکن یہ ہر خاص و عام کی دسترس میں ہوتا ہے۔ آپ مئی اور جون میں ملک کے کسی بھی شہر میں نکل جائیں اور کسی بھی شاہراہ پر نکل جائیں ڈھیروں کے ڈھیر تربوز گزرنے والوں کو اپنی جانب کھینچ ہی لاتے ہیں۔

About soban

Check Also

سو سال تک کمزوری آپ کے قریب نہ آئے گی! اعصابی کمزوری کا بے حد مفید گھر یلو نسخہ

آپ کے ساتھ شئیر کرنے والے ہیں یہ اعصاب اور پٹھوں کو مضبوط بنانے میں …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *