حالات آؤٹ آف کنٹرول! پاکستان میں لاک ڈاؤن کا مطالبہ کر دیا گیا

چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے ملک میں کورونا کے پھیلاؤ پر تشویش کا اظہار کرتےہوئے وائرس سے جاں بحق افراد کے ورثا سے افسوس کا اظہار کیا ہے۔ اپنے بیان میں بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پنجاب اور کے پی میں کورونا حکومتی نااہلی کی وجہ سے آج قابو سے باہر ہوچکا ہے، بروقت لاک ڈاؤن کرلیا جاتا تو کورونا کے پھیلاؤ کو بآسانی روکا جاسکتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان بتائیں ایس او پیز پر عملدرآمدکیلئے بنائی گئی ٹائیگر فورس ناکام ہوگئی؟ عمران خان نے کورونا کا شکار ہونے کے باوجود قرنطنیہ میں5 رکنی اجلاس کی سربراہی کی، وزیراعظم کورونا کا شکار ہوکر احتیاط نہ کرے تو عام آدمی کیسے ایس او پیز کا خیال کرے گا۔ چیئرمین پی پی کا کہنا

تھا کہ ویکسی نیشن واحد طریقہ ہےجس سے معاشی مشکلات سے بچا جاسکتا ہے لیکن بدقسمتی سے ملک میں ویکسین نہ ہونے کے برابر ہے۔

حکومت چاہتی تو بروقت بڑے پیمانے پر کورونا ویکسین خرید سکتی تھی مگر عمران خان کی کوشش مفت امدادی ویکسین کا حصول رہی، چین ویکسین عطیہ نہ کرتا تو فرنٹ لائن ہیلتھ ورکرز کو ڈوز فراہم کرنے کا سلسلہ نہ شروع ہوپاتا، عمران خان کو کورونا ریلیف فنڈ کے ایک ایک روپے کا حساب دینا ہوگا۔ دوسری جانب پیپلزپارٹی کی رہنما شیری رحمان نے ملک میں کورونا کی بلند سطح کے باعث مکمل لاک ڈاؤن کا مطالبہ کردیا۔

شیری رحمان نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر این سی او سی کے کورونا کے آج کے اعداد و شمار شیئر کیے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں آج بھی کوروناکی مثبت شرح بلند ہے، اب وقت ہےکہ تمام اجتماعات سمیت سب چیزیں بندکردی جائیں۔ شیری رحمان کا کہنا تھا کہ کورونا کے بڑھتےکیسز کے سبب پابندی کے لیے 2 ہفتوں کا انتظارنہ کیا جائے، صوبے اپنےطور مزیدکام نہیں کرسکتے۔

About soban

Check Also

”زندگی میں اگر خوشی چاہیے تو تین با تیں اپنے ساتھ باندھ لو او ر غم کو ہمیشہ کے لیے نکال دو۔“

اچھی کتابیں اور سچے لوگ ہر کسی کو سمجھ نہیں آتے! دنیا میں کوئی نہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *