میں نے پوچھا یا اللہ مجھے سکون کیوں نہیں ملتا ؟ دل کو چھو لینے والے غضب کے اقوال

یااللہ !ہمیں صیحح فیصلے کرنے والا اور مسئلوں کو حل کرنے والا بنا دے۔ اے ایمان والو! جب کوئی مشکل درپیش ہوتو صبر ونما ز سے مد دلو۔یقیناً اللہ مدد کرنے والوں کے ساتھ ہے۔ حقیقت یہ ہے کہ انسان اپنے رب کا بڑا ناشکرا ہے۔ اے اللہ ! مجھے توبہ کرنے والوںمیں شامل کر۔ اور مجھے پاک لوگوں میں شامل فرما۔ اور تیرا رب تجھے بھولنے والا نہیں ۔ اے ہمارے رب! مجھے بھی بخش دے ۔ اور میرے ماں باپ کو بھی اور ایمان والوں کو بھی۔ میں نے کہا تیری مدد کیسے ملے گی جواب ملا صبر و نماز سے مدد لیا کرو۔ میں نے کہا میں بہت گناہ گ ا ر ہوں جواب ملا اللہ کی رحمت سے مایوس نہ ہو۔ اللہ سب کو بخش دے گا۔ میں نے کہا بہت اکیلا ہوں جواب ملا بے شک ہم تمہارے شہ رگ سے بھی زیادہ قریب ہیں۔

میں نے کہا میرے دل کو سکون نہیں ہے؟ جواب ملا :بے شک اللہ کی یاد میں ہی دلوں کو سکون اور اطمینان ملتاہے۔ میں نے کہا مجھے کوئی یاد نہیں کرتا؟ جو اب ملا: مجھے یاد کرو میں تمہیں یاد کرو گا۔ جو کسی دوسرے مسلمان کے عیب ڈھونڈتا پھرتا ہے تو اللہ پاک اس کے عیبوں کو پکڑتاہے اور اللہ پاک جس کے عیبوں کو پکڑتاہے تو پھر اس کو رسوا اور ذلیل کردیتاہے ۔ اگرچہ وہ پھر اپنے گھر کے اندر کیوں نہ ہو۔ اے میرے پروردگا ر ! میں تجھ سے مانگ کر کبھی محروم نہیں رہا۔ دنیا میں اکثر لوگوں کی وفا وہاں تک ہوتی ہے جہاں تک ان کا مطلب ہوتا ہے۔ اس لیے امید سے صرف اللہ سے رکھو۔ کبھی کبھی وقت کے ساتھ سب ٹھیک نہیں ، سب ختم ہوجاتا ہے۔ مسئلے اور بھی ہیں۔ مجھ کو بہت سے درپیش ، تومگر یار میری پہلی پریشانی ہے۔ دل کو کاغذ سمجھ رکھا ہے کیا، آتے ہیں جلاتے ہو، چلے جاتے ہو۔

کچھ لوگ مجھ سے دکھاوے کے رشتے رکھتے ہیں۔ تیرے سجدوں کی اس کو کیا ضرورت۔ چاہے تو پرندوں سے طواف کروالے۔ لاعلمی میں ہم ایسے کتنے ہی کا ش لگا دیتے ہیں جن کو پورا ہونا ہمارے لیے بربادی ہی لاتاہے۔ اس لیے اللہ سے ہمیشہ بہتری مانگو۔ کسی جیسی زندگی یا خوشی نہیں مانگو۔ صرف بہتری مانگو۔ جو ڈوبنے سے ڈرتا ہو اسے پانی میں پھینک دینا چاہیے اور پھر چند ڈبکیاں دے کر نکال دینا چاہیے اس کا سار ا خوف زائل ہوجائے گا۔ پھر اس کو پتہ چلے گا کہ پانی اس سے زیادہ طاقت ور نہیں تھا۔ تبھی اسے کشتی میں محفوظ رہنے کی قدر کا احساس ہوگا۔ وہ جان جائے گا کہ وہ خود کتنا خطرنا ک ہے ؟

کتنا بڑا حفاظت کرنے والا ہے۔ زندگی اور قسمت کا پتہ اگر زائچ ہوں توآدھا آدھ لکیروں اور ستاروں سے لگنے لگتا تو پھر اللہ انسان کو عقل نہ دیتا۔ بس صرف یہی چیزیں دے کر زمین پر اتا ر دیتا۔ زندگی کتنی غیر یقینی چیز ہے ۔ موم بتی کے شعلے کی طرح ۔ بے ثبات ، زندگی کی جو ذرا سی پھونک سے بجھ جائے ۔ یہ لمحے بھر کا کھیل ہے یاد رکھو! خوبصورتی اور امر ہونے کی چاہا ، یہ دونوں چیزیں انسان کو دھوکے میں ڈال کر ممنوعہ حد پار کرواتی ہے۔

About soban

Check Also

”زندگی میں اگر خوشی چاہیے تو تین با تیں اپنے ساتھ باندھ لو او ر غم کو ہمیشہ کے لیے نکال دو۔“

اچھی کتابیں اور سچے لوگ ہر کسی کو سمجھ نہیں آتے! دنیا میں کوئی نہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *