اٹلی؛ 15 برس سے غیرحاضر ملازم لاکھوں ڈالر تنخواہ لے اڑا


جنوبی اٹلی کے ایک ہسپتال کا ملازم 15 برس سے غیر حاضر تھا جس نے ساڑھے 6 لاکھ تنخواہ بٹوری (فوٹو: فائل)

روم، اٹلی: مسلسل 15 سال تک ملازمت سے غیر حاضر رہنے کے باوجود تنخواہ وصول کرنے والا اطالوی شخص آخرکار قانون کی گرفت میں آگیا۔

اٹالین میڈیا کے مطابق شہری سلواٹور شوماکے پر دھوکا دہی، رشوت، اختیارات کے بے جا استعمال جیسے دیگر مقدمات قائم کیے گئے ہیں۔ پولیس کے مطابق وہ پگلائسے ہسپتال میں ملازم تھا اور اس نے 2005ء سے ہسپتال کی شکل نہیں دیکھی تھی۔ اس دوران اس نے ہرماہ تنخواہ وصول کی جس کا تخمینہ پاکستانی روپوں میں نو کروڑ روپے بنتا ہے یعنی ساڑھے 6 لاکھ امریکی ڈالر۔

اپنی عدم موجودگی میں اس نے نصف تنخواہ اپنے سپروائزر کو دی تاکہ وہ خاموشی سے اس کی حاضری لگاتا رہے۔ مالی معاملات کی تحقیق کرنے والے اطالوی پولیس افسران نے ہسپتال سے اس کی شفٹ، حاضری کی تفصیلات اور دیگر افراد سے بیانات بھی لیے ہیں۔
حال ہی میں اٹلی کی حکومت نے اپنے کام سے غیرحاضر ملازموں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کیا ہے۔ اس شہری کو ابھی گرفتار نہیں کیا گیا ہے۔ پولیس نے تمام سوالات کے جوابات دینے کے لیے اسے 20 دن دیئے ہیں۔ اس کی روشنی میں ہی گرفتاری کا فیصلہ کیا جائے گا۔

About soban

Check Also

”زندگی میں اگر خوشی چاہیے تو تین با تیں اپنے ساتھ باندھ لو او ر غم کو ہمیشہ کے لیے نکال دو۔“

اچھی کتابیں اور سچے لوگ ہر کسی کو سمجھ نہیں آتے! دنیا میں کوئی نہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *