سحری اور افطاری میں یہ کام کبھی نہ کرنا

حضرت امام علی ؑ کی خدمت میں ایک شخص آکر عرض کرنے لگایاعلی :وہ کونسا عمل ہے جو افطار اور سحری کے وقت اللہ کو سب سے زیادہ ناپسند ہے بس جیسے ہی یہ پوچھا گیا تو امام علی ؑ نے فرمایا: اے شخص! وہ عمل غص ہ کرنا ہے اللہ کو شکر نہ کرنا ہے۔ یا د رکھنا! میں نے اللہ کے رسول سے سنا ہے کہ روزے رکھتے وقت یا روزے کھولتے وقت جو انسان غ صے میں رہتا ہے

اس وقت جو لوگ اسے چڑھے ہوتے ہیں۔ ان سے تلخ بات کرتا ہے تو اللہ اس انسان کے روزے کےثواب کو کم کردیتا ہے یا جو انسان روزہ کھولتے وقت اللہ کا شکر نہیں کرتا تو اللہ ایسے انسان کو نا پسند کرتا ہے۔ یا د رکھنا! سب سے عظیم عمل یہ ہے کہ سحری اور افطاری میں انسان پرسکون رہے۔ اللہ تعالیٰ کو یا دکرے۔ اللہ تعالیٰ کا ذکر کرے۔ اللہ تعالیٰ کا شکر کرے۔ کیونکہ میں نے اللہ تعالیٰ کے رسول سے سنا جو انسان روزہ کھولتے وقت اللہ کا شکر کرتا ہے۔ اللہ تعالیٰ اس کے روزے کے ثواب کو ستر گنا بڑھا دیتا ہے۔ اور اس انسان کے تمام گن اہ مع اف کردیتا ہے۔ حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے

کہ آنحضرت ﷺ نے انصار کی ایک عورت (ام سنان) سے فرمایا ۔ تو ہمارے ساتھ حج کیوں نہیں کرتی! وہ کہنے لگی میرے پاس پانی لادنے والا ایک اونٹ تھا اس پر فلانے کا باپ یعنی اس کا خاوند اور اس کا بیٹا سوار ہو کر کہیں چل دیا ہے۔ ایک ہی اونٹ چھوڑگیا ہے اس پر ہم پانی لادتے ہیں ۔ آپؐ نے فرمایا جب رمضان المبارک آئے تو عمرہ کرلے۔ رمضان میں عمرہ حج کرنے کے برابر ہے یا ایسا ہی کچھ فرمایا۔ حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ آنحضر ت ﷺ نے فرمایا روزہ (دوزخ کی) ڈھال ہے ۔ روزے میں ف حش باتیں نہ کرو نہ جہالت کی باتیں اگر کوئی اس سے لڑے یا گالی دے تو دوبار کہہ دے میں روزہ دار ہوں۔

قسم اس کی جس کے ہاتھ میں میری جان ہے روزہ دار کے منہ کی بو اللہ کے نزدیک مشک کی خوشبو سے بہترہے۔ اللہ فرماتا ہے روزہ دار میرے لئے اپنا کھانا پانی چھوڑ دیتا ہے اور اپنی خواہش ترک کردیتا ہے۔ روزہ خاص میرے لئے ہے اور میں خود ہی اس کا بدلہ دوں گا۔ اور ایک نیکی کے بدلے دس نیکیوں کا ثواب ملے گا۔ حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ آنحضرت ﷺ بھلائی پہنچانے میں سب لوگوں سے زیادہ سخی تھے۔ اور رمضان میں جب حضرت جبرائیل ؑ آپ ﷺ سے ملتے رہتے تو آپؐ اور دنوں سے زیادہ سخاوت کرتے۔ جبرائیل ؑ رمضان میں ہر رات آپؐ سے ملا کرتے ۔ رمضان گزرنے تک وہ آپؐ سے قرآن کا دَور کیا کرتے تو جن دنوں میں جبرائیل ؑ آپؐ سے ملتے رہتے آپؐ چلتی ہوا سے بھی زیادہ بھلائی پہنچانے میں سخی ہوتے۔

About soban

Check Also

کان کا درد دو منٹ میں ختم۔

کان میں درد کی متعدد وجوہات ہوسکتی ہیں، جیسے ٹونسلز، ناک کے اندرونی حصے میں …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *