روزہ کن چیزوں سے نہیں ٹوٹتا؟ کچھ لوگ ساری زندگی یہی سمجھتے رہے کہ ان سے روزہ ٹوٹ جاتا ہے

روزہ کن چیزوں سے نہیں ٹوٹتا؟؟ اگر روزہ بھول کر کچھ کھالے یا پی لے یا بھولے سے میاں بیوی قربت کرلیں تو ان کا روزہ نہیں گیا۔ اگر بھول کر پیٹ بھر کر بھی کھا پی لے تو روزہ نہیں ٹوٹتا ۔ اگر بھول کرکئی دفعہ بھی کھا پی لیا تو روزہ نہیں ٹوٹے گا۔ دوسرا: ایک شخص کو بھول کر کچھ کھاتے پیتے دیکھا

تو اگر وہ اس قدر طاقت ور ہے کہ روزہ سے زیادہ تکلیف نہیں ہوتی تو روزہ یا ددلا دینا واجب ہے ۔ اور اگر کوئی طاقت نہ رکھتا ہو، کہ روزہ سے تکلیف ہوتی ہے تو اسے یاد نہ دلا دے بلکہ کھانے دے۔ تھوک نگلنے سے روزہ نہیں ٹوٹتا چاہے تھو ک جتنا بھی ہو۔ تیسرا: اگر پان کھا کے خوب کلی غرغرہ کرکے منہ صاف کرلیا لیکن تھوک کی سرخی نہیں گئی تو اس کا کچھ حرج نہیں ، روزہ ہوگیا۔ چوتھا: ناک کو اتنا زور سے سڑک لیا کہ حلق میں چلی گئی تو روزہ نہیں ٹوٹا ، اسی طرح منہ کی رال سڑک کر نگل جانے سے روزہ نہیں ٹوٹتا ۔ پانچواں: خ ون تھوک سے کم ہو اورخ ون کا مزہ حلق میں معلوم نہ ہوتو روزہ نہیں ٹوٹتا۔

چھٹا: اگر زبان سے کوئی چیز چکھ کر تھوک دی تو روزہ نہیں ٹوٹا لیکن خواہ مخواہ ایسا کرنا مکروہ ہے ہاں ! اگرکسی عورت کا شوہر بڑا بدمزاج ہو اور یہ ڈر ہو کہ اگر سالن میں نمک وغیرہ درست نہ ہوا توغصہ ہوگا اس کونمک چکھ لینا درست ہے اور مکروہ نہیں ۔ ساتوا ں : کسی چیز کو چبا کر چھوٹے بچے کو کھلانا مکروہ ہے البتہ اگر اس کی ضرورت پڑے اور مجبوری و ناچاری ہوجائے تو مکروہ نہیں۔ آٹھواں: مسواک سے دانت صاف کرنا درست ہے ۔ چاہے سوکھی مسوا ک ہو۔ یا تازی ہو ۔ اسی وقت کی توڑی ہوئی نیم مسوا ک ہے اور اگر اس کا کڑوا پن منہ میں معلوم ہوتا ہے تب بھی مکروہ نہیں ہے۔

About soban

Check Also

”زندگی میں اگر خوشی چاہیے تو تین با تیں اپنے ساتھ باندھ لو او ر غم کو ہمیشہ کے لیے نکال دو۔“

اچھی کتابیں اور سچے لوگ ہر کسی کو سمجھ نہیں آتے! دنیا میں کوئی نہ …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *